صفحہ اول مذہبی ملی

دعوت کا طریقہ کار

تحریر: سرفراز عالم ابوطلحہ ندوى

اس میں کوئی شک نہیں کہ دعوت دین اسلام کا ایک اہم اور بنیادی رکن رہا ہے، جس کے تحت اسلام کی نشر واشاعت کا کام نہایت ہی بہترین انداز میں انجام دیا جاتا ہے ، اور دعوت ہی ایک ایسا موثر اور دل نشین ذریعہ ہے، جس سے لوگوں کے دل قبول اسلام کے لئے بکراں وبے چین ہوجایا کرتا ہے، ان تمام چیزوں کے باوجود دعوت کو حکمت و دانائی، موعظت اور عقل وخرد کے ذریعے دوسروں تک پہنچایا جائے تو اسلام کی نشر واشاعت میں آسانی ہوگی، اگر دعوت کا کام نرمی کے بجائے سختی سے کیا جائے تو اس کا نتیجہ بہتر ہونے کے بجائے مشکل تر ہوجائے گا، جس سے دین کی خدمت اور اس کی اشاعت نا ممکن ہے، کیونکہ اللہ تعالیٰ نے دعوت کے مشن کو عقلمندی کے ساتھ بڑھانے کا حکم دیا ہے، اللہ تعالیٰ نے فرمایا۔
“ادعوا إلى سبيل ربك بالحكمة و الموعظة وجادلهم باللتي هي أحسن”

اگر حکمت ودانائی کے ساتھ لوگوں کو دعوت دی جائے تو لوگ اسلام کا گرویدہ ودلدادہ بن جائے گا، اس سے اسلام کا بول بالا ہوجائے گا، اس کے ماننے والے کی تعداد بڑھتی جائے گی، اسلامی طاقت وقوت مضبوط ومستحکم ہوجائے گی، اور اس کی چاہت ہر عام وخاص ہوجائے گی ، ان چیزوں کو اسی وقت ہم اور آپ کر سکتے ہیں۔

جب ہمارے اندر ایمان اور ارکان ایمان اسی طرح اسلام اور ارکان اسلام کی مکمل تحقیقات اور جانکاری ہوگی، تب جاکر ایک دوسرے کے دلوں کو اسلامی تعلیمات سے متاثر کر سکتے ہیں،اور ایک دوسرے کو اسلام سے روشناس کر سکتے ہیں، اور انہیں ایمانی دعوت سے لیس کر کے دین اسلام کے عظیم الشان سپہ سالار بنانے میں کامیاب ہو سکتے ہیں، اسی طرح ہم اپنے مشن میں کامیاب ہو سکتے ہیں۔

اللہ تعالیٰ ہمیں دین اسلام کی دعوت وإصلاح توفیق عطا فرمائے آمین ثم آمین یا رب العالمین

Related posts

حضرت بھلے شاہ رحمہ اللہ

Hamari Aawaz Urdu

نعت رسول: مجھے بھی جام پلادے وصال کا اک دن

Hamari Aawaz Urdu

حرم مدینہ اور مولانا اسماعیل دہلوی

Hamari Aawaz Urdu

ایک تبصرہ چھوڑیں