تاریخی سماجی صفحہ اول مذہبی ملی

نبی کریمﷺ نے مشرکین کو صرف توحید کی دعوت نہیں دی

از قلم: تصویر عالم بن امیر حسین رتنوی

رام مندر کے ردعمل میں مسلمانوں کو دعوتی کام کے مشورے دئیے جا رہے ہیں ۔ دعوتی فریضے سے انکار نہیں مگر امت مسلمہ اس کام کی بھی متحمل نہیں ہے ۔
آپ ﷺ نے مشرکین وقت کو صرف توحید کی دعوت نہیں دی ، بلکہ آپ ﷺ اور صحابہ کرام ؓ نے اپنے حسن اخلاق ، امانت داری ، صداقت ، صلہ رحمی ، شجاعت ، احسن معاملات ، حق گوئی ، جفاکشی اور بےلوث خدمت کے انمٹ نقوش چھوڑیں ۔ داعیانہ کردار ادا کرنے والوں کو ان صفات کا حامل ہونا لازمی ہے ۔ آپ ﷺ کی دعوت معروضی نہیں تھی ، بلکہ حق و باطل کا واضح فرق کرنے والی تھی ، کریمانہ اخلاق اور دلسوزی کا اعلیٰ نمونہ تھی ۔
میں یہ صفات اس لئے بیان کر رہا ہوں کہ ہمارے یہاں دعوت دین کا کام کرنے والی جماعتوں و افراد میں ان صفات کا فقدان صاف محسوس کیا جا سکتا ہے ۔ خود داعیان دین کا آپس میں تال میل و ربط ضبط نہیں ہے ۔ ڈاکٹر ذاکر نائیک کی بےلاگ اور دوٹوک دعوت اپنا رنگ دکھانے لگی اور وہ حکومتی عتاب کا شکار ہوئے تو بیس کروڑ کی امت مسلمہ نے بیچ منجدھار میں تھپیڑے کھانے چھوڑ دیا ۔
ہم حالات سے بھاگ نہیں سکتے ، بلکہ ہمیں اپنی شناخت بحال کرنے کے لئے تمام طریقے بروئے کار لانے ہوں گے ، ساتھ ہی امت واحدہ بن اپنا مشن انجام دینا ہوگا ۔

Related posts

اجمیر شریف حاضر ہو کر معافی مانگے امیش دیوگن : علامہ یاسین اختر مصباحی

Hamari Aawaz Urdu

فرانسیسی صدر میکرون کی غلیظ حرکت پر دنیا کے امن پسند لوگ تھوتھو کررہے ہیں

Hamari Aawaz Urdu

ارطغرل غازی مختصر حیات و خدمات

Hamari Aawaz Urdu

ایک تبصرہ چھوڑیں