تاریخی سیرت وسوانح صفحہ اول مذہبی

اشاعت سلام اور کردار نبویﷺ

تحریر:- شیخ نشاط اختر برکاتی

عصر حاضر میں اگر ہم ناکام ہیں اسکی وجہ یہ بھی ہے کہ ہم کردار نبوی صلی اللہ علیہ و سلم کو فراموش کر بیٹھے ہیں.یہ وہی کرادر ہے جس نے مسلمانوں کو ہمیشہ کمال عروج عطا کیا ہے.یہ وہی کردار ہے جس نے ہمیشہ امن و محبت کا پیغام دیا ہے. انسانوں کو زندگی جینے کا بہترین سلیقہ عطا کیا ہے.صبر و استقامت کا عمدہ زاویہ عطا کیا ہے.
مقام افسوس ہے کہ آج اس کردار نبوی کو چھوڑ کر ہم تنزلی کے شکار ہیں.آج مسلمان ظلم و بربریت کا شکار اسلۓ ہے کہ اخلاق نبوی کا دامن ہم نے ترک کردیا ہے. مگر معلوم نہیں کہ یہ وہی کردار/اخلاق ہے جس کے ذریعہ ایک صدی کے اندر تین براعظم(یورب,ایشیا,افریقہ)پر اسلام غالب ہوا تھا۔

کہا جاتا ہے کہ اسلام کی اشاعت کسی لوہے کی تلوار سے نہیں ہوئی بلکہ اخلاق کے تلوار سے ہوئی ہے. مگر صد افسوس آج اخلاق کی چند جھلکیاں تک نظر نہیں آتی۔

غور کریں پیغمبر اسلام محمد صلی اللہ علیہ وسلم رسول مختار تھے اگر وہ چاہتے فقط ایک اشارے سے پوری کائنات کو اسلام کی طرف جھکا دیتے مگر ایسا کیوں نہیں ہوا؟
اسلۓ کہ سرکار علیہ الصلاۃ والسلام نے ہم امتیوں کو ایک نمونہ عطا کرنا منظور تھا… کہ..
اگر تمہیں گالیاں دی جاۓ تو تم اسکے بدلے گالی نہ دو.تم پر ظلم کیا جاۓ برداشت کرو.راہ تنگ کۓ جائیں تو دوسری راہ اختیار کرلو.
ایسے مصائب اور ظلم کو برداشت کرکے سرکار مدینہ صلی اللہ علیہ وسلم کے اس اخلاق کریمانہ سے اسلام کی اشاعت ہوئی ہے. آپ پر ظلم کرنے والوں نے آپکے اخلاق سے متأثر ہوکر مشرف بہ اسلام ہوۓ.

ہر مبلغ کو چاہئے کہ تبلیغی میدان میں قدم رکھنے سے قبل سرکار علیہ الصلاۃ والسلام کے ان مصائب اور تکالیف والے مراحل کا جائزہ لیں. تب جاکر کامیابی حاصل ہوسکتی ہے.

قابل غور یہ بھی ہے کہ سرکار علیہ الصلاۃ والسلام نے اعلان نبوت سے قبل بھی لوگوں کو اپنے اخلاق سے متاثر کرایا ہے. حتی کہ آپ لوگوں کے درمیان (صادق و امین) سے ملقب کۓ جانے لگے اور اسکا أثر یہ ہوا کہ جب اعلان نبوت کا وقت آیا تو آپ صلی اللہ علیہ و سلم پر لوگوں کا اتنا یقین اور اعتماد تھا کہ آپکے فرماۓ ہوۓ:(کیا میں تم سے کہوں کے اس پہاڑی کی پیچھے ایک لشکر ہے جو تم پر حملہ آور ہے تو تم مانوگے؟) پر سب نے تصدیق کۓ
یہ ہے اخلاق/کردار کا أثر جسکے ذریعہ اپنے تو اپنے دشمنوں کو بھی جھکایا جا سکتا ہے.

خداۓ پاک سے دعا ہے کہ ہمیں فکر خیر اور عمل خیر کی توفیق بخشے… راہ حق کا سالک بناۓ.حسن اخلاق کا حامل بناۓ.

Related posts

منقبت: آفتابِ علم وفن ، سیرت نعیم الدین کی

Hamari Aawaz Urdu

کفارۂ صیام کی شرعی حیثیت

Hamari Aawaz Urdu

نعت رسول: خدا نے ذات کا اپنی تمہیں مظہر بنایا ہے

Hamari Aawaz Urdu

ایک تبصرہ چھوڑیں