Top 10 بین الاقوامی صفحہ اول مذہبی ملی

سنی افریقن علماء کونسل کی بڑی کانفرنس، تین لوگوں نے اسلام قبول کیا

از قلم : علم الهدی رضوی متعلم الجامعتہ الاشرفیہ مبارکپور اعظم گڑھ
ہریا. بانسی سدھارتھ نگر 8052819052

سنی افریقن علماء کونسل کے بانی حضرات خصوصیت کے ساتھ مبلغ ساؤتھ افریقہ ناشر مسلک اعلی حضرت. حضرت علامہ مولانا عبدالرحمن صاحب قبلہ مد ظلّہ العالی اور مدبر قوم وملت عزت مآب الحاج الشاہ علامہ حبیب میلانزی صاحب قبلہ مد ظلّہ العالی اور ساتھ ساتھ فخر قراء قاری خوش الحان حضرت حافظ و قاری ادریس رجب صاحب قبلہ مدظلہ العالی ہیں۔
ان حضرات نے مل کر کے ڈربن ساؤتھ افریقہ کی سرزمین پر وہ کام انجام دیا ہے جو کام تمام عالم اسلام کے لئے ایک عظیم کام ہے سنی افریقن علماء کونسل کی عظیم ٹیم نے عظیم تحریک نے پوری ساؤتھ افریقہ کے اندر تبلیغ دین کا کام انجام دے کر کے سب کی زبانوں پر حقانیت رٹا اور بسا دی ہے سنی افریقن علماء کونسل دنیا کی ایک عظیم ترین تحریک ہے۔
سنی افریقن علماء کونسل کی جانب سے گزشتہ 15 نمبر یعنی اتوار کو ساؤتھ افریقہ کے اندر ایک میرج ہال میں عظیم پروگرام ہوا جو پہلی مرتبہ اس میرج ہال میں ہوا جس میں کثیر تعداد میں عوام اہلسنت اور مسلمانوں کا ہجوم تھا بہت زیادہ تعداد میں لوگ شریک ہوئے اور علمائے کرام کا جم غفیر تھا یہ پروگرام ساؤتھ افریقہ کا تاریخی پروگرام تھا جس میں عظیم علمائے کرام شریک ہوئے جس میں خصوصیت کے ساتھ ولی کامل شیخ المشائخ شیخ الحاج الشاہ قبلہ صوفی صاحب علیہ الرحمۃ والرضوان کے آستانے سے ان کے سجادہ نشین شیخ طریقت پیر طریقت رہبر راہ شریعت حضرت علامہ مولانا مفتی غلام محمد صاحب قبلہ صوفی مدظلہ العالی تشریف فرما تھے اور مبلغ اسلام حضرت علامہ قاری سعد صاحب قاضی مدظلہ العالی و النورانی اور فضیلۃ الشیخ قبلہ علامہ مولانا مفتی فاروق صاحب قبلہ صوفی مدظلہ العالی یہ تمام حضرات حضور شیخ المشائخ صوفی صاحب علیہ الرحمۃ کے صاحبزادگان ہیں جو سنی افریقن علماء کونسل میں تشریف لائے تھے اور اس عظیم پروگرام میں ورلڈ ثناخواں نعت خواں رسول علامہ راشد قاضی صاحب قبلہ مد ظلّہ العالی بھی شریک تھے اور اپنے خوبصورت انداز میں نعت مصطفی صلی اللہ علیہ وسلم پیش فرمائیں یہ ساؤتھ افریقہ کی ایک تاریخی عظیم کانفرنس تھی جسے پورا ساؤتھ افریقہ متاثر ہوا اللہ رب العزت نے خصوصیت کے ساتھ حضرت علامہ عبد الرحمن صاحب قبلہ اور علامہ حبیب میلانزی صاحب قبلہ اور قبلہ عزت مآب قاری ادریس رجب صاحب کو تمام مصیبتوں بلاؤں سے محفوظ فرمائے اور خوب خوب تبلیغ دین کرنے کی توفیق عطا فرمائے۔
یہ تینوں مجاہد جو سنی افریقن علماء کونسل کے بانی حضرات ہیں ان کی محنت اتنی عظیم ہے کہ انہوں نے سنی افریقن علماء کونسل کے ذریعہ سات مدرسے قائم کئے اور مدرسے کے ساتھ ساتھ انھوں نے نے ایسا نصاب شامل کیا جو لوگوں کو صحت اور توانائی سے بھی سرفراز کر رہا ہے سنی افریقن علماء کونسل کے 7 مدرسے ہیں اور ان مدرسوں میں الحمدللہ روزانہ غریبوں مزدوروں لاچاروں کو کھانا تقسیم کیا جاتا ہے سنی افریقن علماء کونسل کے سات مدارس سے کھانا تقسیم کیا جاتا ہے الحمدللہ یہ بہت عظیم کام ہے
سنی افریقن علماء کونسل تعلیم ہی نہیں بلکہ اپنے عوام کو ہر طرح کی امداد کر رہی ہے ان کی ضروریات کو بھی پوری کر رہی ہے اور ہر طرح کی امداد کر رہی ہے جو لوگ اس لائق ہیں یہ کام ساؤتھ افریقہ میں واحد جگہ پہ ہو رہا ہے اور اس واحد جگہ کا نام سنی افریقن علماء کونسل ہے روزانہ سات مدارس سے لوگوں کو کھانا تقسیم کرنا لوگوں کی ضروریات کو پوری کرنا لوگوں کی ہر طرح کی امداد کرنا یہ کام اللہ رب العزت نے سنی افریقن علماء کونسل کو بخشا ہے بہت ہی خوشی اور سعادت کی بات ہے اللہ رب العزت سنی علماء کونسل کے تمام ممبران تمام انتظامیہ کے لوگوں کو تمام مصیبتوں بلاؤں سے محفوظ فرمائے اور سنی افریقن علماء کونسل میں کثیر تعداد میں علماء کرام کی تعداد ہے اور علمائے کرام اس عظیم تحریک سے جڑے ہوئے ہیں اور دل لگن اور محبت و خلوص کے ساتھ اس تحریک کو ملک کے اندر اندر پھیلا رہے ہیں اور جگہ جگہ تبلیغ دین کا کام انجام دے رہے ہیں سنی افریقن علماء کونسل کی بہت بڑی کامیابی ہے انہوں نے اپنی تحریک کے ذریعے اور خصوصیت کے ساتھ عزت مآب قبلہ مفتی محمد فاروق صوفی صاحب مدظلہ العالی کے ذریعے تین لوگوں کو اسلام سے وابستہ کیا تین لوگوں نے حضرت علامہ مفتی صاحب کے دست مبارک پر اسلام قبول کیا یہ بہت بڑی سنی علماء کونسل کی کامیابی ہے اور پوری دنیا کے لیے خوشی کی بات ہے جو لوگ کفار تھے وہ لوگ اسلام سے وابستہ ہوئے اور یہ سنی افریقن علماء کونسل کی سب سے عظیم ترین محنت ہے اللہ رب العزت اسی طرح اس عظیم تحریک کو دن دونی رات چوگنی ترقی عطا فرمائے اور خوب خوب تبلیغ دین کرنے کی توفیق عطا فرمائے اور پوری دنیا کے اندر مذہب اسلام کے پرچم کو لہرانے کی توفیق عطا فرمائے سنی افریقن علماء کونسل نے لوگوں کو اسلام سے وابستہ کرکے پھر دنیا کے اندر بہت بڑا کام کیا ہے اور اس کام کا صلہ ان شاء اللہ العزیز میدان محشر میں ضرور ملے گا اور جو لوگ اسلام سے وابستہ ہوئے ہیں اللہ تعالی ان کو شریعت کی پابندی کے ساتھ رہنے کی توفیق عطا فرمائے..!…!…سنی افریقن علماء کونسل تحریک نے بڑے جلد ہی ساؤتھ افریقہ کے اندر بہت بڑا کارنامہ انجام دیا تقریباً 7 سے زائد مدارس انہوں نے قائم کیا اور آج بھی قائم کررہے ہیں ہزاروں طلبہ مدارس اسلامیہ میں تعلیم دین سے آشنا ہو رہے ہیں اور جو لوگ بالکل شریعت مصطفی سے دور تھے وہ لوگ سنی افریقن علماء کونسل کے ذریعے اسلام سے متصل ہو رہے ہیں اور اسلام کی حقانیت کو پہچان رہے ہیں یہ سب محنتیں ہیں حضرت علامہ عبدالرحمن صاحب اور حضرت علامہ حبیب میلانزی صاحب اور قاری ادریس رجب صاحب قبلہ مد ظلّہ العالی کی اللہ رب العزت ان تمام حضرات کے ذمہ یہ کام لیا جن کے ذریعے آج ڈربن کی سرزمین پر لوگ اسلام سے اور تعلیم دین سے وابستہ ہو رہے ہیں یہ ڈربن اور ساؤتھ افریقہ کے لئے بہت عظیم ترین تحریک ہے اللہ رب العزت اس تحریک کو دشمنوں کے شر سے محفوظ فرمائے۔۔
اسلام قبول کرنے والوں کی تعداد تقریبا ابھی تین ہے جن میں ایک مرد اور دو خواتین ہیں یہ لوگ اسلام کی حقیقت کو جان کر کے اور سنی افریقن علماء کونسل کی محنتوں کو دیکھ کر کے اسلام سے متاثر ہوئے اور حضرت علامہ فاروق صوفی صاحب کے ذریعے انہوں نے اسلام قبول کیا یہ تحریک کی عظیم کوشش ہے اور قبلہ علامہ عبدالرحمن صاحب بانی سنی افریقن علماء کونسل نے بتایا کہ ہم نے بڑی ہی جدوجہد کے ساتھ بڑی محنت کے ساتھ بڑی کوشش کے ساتھ خلوص اور محبت کے ساتھ آپ نے اس تحریک کو اپنے اس خدا کو راضی کرنے کے لیے چالو کئے اور اپنے آقا صلی اللہ علیہ وسلم کی سنتوں پر عمل کرتے ہوئے اس کو آگے بڑھاتے گئے تاکہ لوگ اس تحریک کے دامن میں اور اسلام سے وابستہ ہوں اور اسلام کی حقانیت اور سچائی کو جانیں ہمارا مقصد اسلام کو دنیا کے اندر عام کرنا ہے اور لوگوں کو حرام اور حلال کی تمیز کو بتانا ہے لوگوں کو نبی صلی اللہ علیہ وسلم کو آئیڈیل بنانے کی بات بتانی ہے لوگوں کو نبی کریم صلی اللہ تعالٰیٰ علیہ وسلم کی زندگی کو اپنے لئے نمونہ عمل بنانے کی اپیل کرنی ہے اور خصوصیت کے ساتھ نماز کی پابندی کی دعوت دینی ہے زکوۃ حج اور جو اسلام کے فرائض ہیں ان کو لوگوں تک بتانا ہے اور لوگوں کو بتانا ہے کہ مسلک اعلیٰ حضرت مسلک امام اعظم ہے اور ہمیں دامن احمد رضا میں رہنا ہے حضرت علامہ عبد الرحمن صاحب قبلہ ماشاءاللہ حضورتاج الشریعہ علیہ الرحمۃ والرضوان کے خاص مریدین میں سے ہیں اور سنی افریقن علماء کونسل کے جتنے بھی مبلغین اور کارکن ہیں سب الحمدللہ حضور تاج الشریعہ کے مریدین میں سے ہیں اور سنی افریقن علماء کونسل میں جتنے بھی لوگ ہیں مسلک امام احمد رضا کو ماننے والے ہیں اور الحمدللہ خصوصیت کے ساتھ حضرت علامہ مولانا شیخ عبد اللہ صاحب بھی بہت عظیم عالم دین ہیں اور یہ بھی الحمدللہ ساؤتھ افریقہ کے اندر تبلیغِدین کا کام انجام دے رہے ہیں یہ سنی افریقن علماء کونسل کے ایک عظیم رکن ہیں اللہ رب العزت ان تمام علمائے کرام کو تا دیر تک سلامت رکھے اور خصوصیت کے ساتھ حضور نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کا صدقہ عطا فرمائے ان کا یہ عظیم کانفرنس ساؤتھ افریقہ کا تاریخی کانفرنس تھا اور ان شاء اللہ العزیز اس کانفرنس سے پورا ساؤتھ افریقہ متاثر ہوا امید ہے کافی تعداد میں لوگ سنی افریقن علماء کونسل میں شریک ہوں گے اور اس کے رکن اور مبلغین بنتے ہوئے نظر آئیں گے اور سنی افریقن علماء کونسل نے کثیر تعداد میں الگ الگ جگہوں پر ایک اچھی عمارت کی شکل میں ادارے قائم کررہے ہیں اور مستقبل میں بنتا ہوا نظر آئے گا اور ایک عظیم تعلیم دیتا ہوا نظر آئے گا اور علامہ عبد الرحمن صاحب قبلہ مد ظلّہ العالی نے بتایا کہ ہم انشاء اللہ العزیز جلد از جلد ایسا کام کریں گے جو ساؤتھ افریقہ میں ایک مثال بن جائے گا تعلیم مصطفی کو لے کر کے تعلیم دین کو لے کر کے پیغام مصطفی کو لے کر کے ساؤتھ افریقہ میں کام کریں گے اور ہر ایک مجبوری کو ختم کریں گے جس سے لوگ کتراتے ہیں جس سے لوگ دور رہتے ہیں ہمیشہ اللہ تعالی نے ہمیں پیدا کیا تو ہم اپنی زندگی کا مقصد ہی یہی سمجھیں گے کہ تبلیغ دین اور تبلیغ مصطفی اور تبلیغ اسلام ہماری زندگی کا اہم مقصد ہے اللہ رب العزت سنی علماء کونسل کو دن دگنی رات چوگنی ترقی عطا فرمائے اور خوب خوب تبلیغ دین کا کام کرنے کی توفیق عطا فرمائے آمین یا رب العالمین

Related posts

اعلیٰ حضرت اور برطانوی سامراج کی مخالفت

Hamari Aawaz Urdu

زبان کی تباہ کاریاں تیسری قسط

Hamari Aawaz Urdu

آہ !! موت اس کی ہے کرے جس کا زمانہ افسوس

Hamari Aawaz Urdu

ایک تبصرہ چھوڑیں